مسکن / رومانی / آﺅ زندگی بچائیں …. از …. جے ایم تیموری

آﺅ زندگی بچائیں …. از …. جے ایم تیموری

آﺅ زندگی بچائیں ۔۔۔۔۔ جے ایم تیموری

کمرا مکمل تا ریکی میں ڈو با ہوا تھا ۔ خاموشی اتنی گہری تھی کہ کسی ذی نفس کی موجودگی کا احساس تک نہیں ہو رہا تھا ۔ بس ایک پروجیکٹر چلنے کی آواز اس خاموشی میں ایک تلاطم برپا کر رہی تھی اور سفید پردے پر ایک کے بعدایک بدلتی ہولناک تباہی کی تصویریں اس اندھیرے کمرے کو کچھ اور پراسرار بنا رہی تھیں۔ اچانک تصویریں چلنی بند ہو گئیںاور سفید روشن پردے پر سرخ رنگ سے انگریزی اور اردو میں لکھا سلوگن جگمگانے لگا ۔
LET’S SAVE LIFE” ”
” آﺅ زندگی بچائیں “
چند سیکنڈ زکے لیے سلوگن پردے پر نظر آیا ۔ پھر ایکدم ہی کمرے کی لائٹس جل اٹھیںاور پورا کمرا روشنی میں نہا گیا ۔ روشنی ہوتے ہی کمرے میں موجود افراد نے بے اختیار زور سے پلکیں جھپکیں کیونکہ اتنی دیر سے تا ریکی میں رہنے کی وجہ سے بہت زیادہ روشنی آنکھوں میں چبھ رہی تھی ۔ ایسا صرف چند لمحوں کے لیے ہو اتھا ۔تھوڑی ہی دیر میں وہ سب نارمل ہو چکے تھے لیکن اس فلم کو دیکھنے کے بعد ان سب کے چہروں پر گہرے تفکر کی پرچھائیاں نظر آرہی تھیں۔ سب اپنی اپنی جگہ سوچوں میں گم تھے۔
آخر اس خاموشی کو وجاہت حسن نے توڑا ”ابھی ابھی آپ صاحبان نے جو تصویریںدیکھیں ،وہ آٹھ اکتوبر کے زلزلے سے ہونے والی تباہی کی تھیں زلزلہ تو محض چند منٹ کا تھا لیکن اس کے نشانات شاید سالوں ختم نہ ہو پائیں آج کی اس میٹنگ میںہمیں ایسا لائحہ عمل طے کرنا ہے جس سے فوری فنڈز حاصل ہو سکیںتاکہ زلزلہ زدگان کی بحالی کے لیے موثر کارروائی کی جا سکے اس سے پہلے کہ آپ سب اپنی اپنی تجاویز پیش کریںمیں آپ سب کوکسی سے ملواناچاہتا ہوں آپ ہیں ضرغام غوری اپنا introduction یہ خود کروائےں گے “ انھوں نے اپنے دائیں ہاتھ پر بیٹھے ایک تیس بتیس سالہ مرد کی طرف اشارہ کیا، جس کی ذہانت سے چمکتی گہری بھوری آنکھیںاور پر وقارشخصیت اسے یہاں پر موجود تمام لوگوں سے ممتاز کر رہی تھی۔ گو کہ یہاں موجود باقی لوگ بھی اپنی اپنی فیلڈ میں بہت کامیاب اورذہین تھے لیکن ضرغام کی شخصیت کی سحر انگیزی سے وہ بھی مرعوب نظر آرہے تھے ۔
” بائے پروفیشن میں New Era میگزین کے لیے رپورٹنگ کرتا ہوںلیکن زےادہ تر فری لانسنگ کرتا ہوںاس لیے آپ لوگ مجھے بھی اپنی ہی کیٹیگری کا سمجھیے میں بس ایک عام سا انسان ہوں جو ایک درد مند دل رکھتا ہے “ اس کے ہونٹوں پر ہلکی مسکراہٹ تھی۔ سب لوگ اس کے پروقار انداز اور لہجے سے بے حد متاثر تھے۔
”ہماری اس N.G.O میں شامل ہونے کی کوئی خاص وجہ جبکہ ہمارے اس ادارے کو شروع ہوئے ابھی بمشکل تین برس ہوئے ہیںاور آپ کی شخصیت کی سحر انگیزی کہتی ہے کہ آپ کو تو بڑی سے بڑی این۔ جی ۔ اوز بھی خوش آمدید کہہ سکتی ہیں “ اچانک ہی اس کی سامنے کی رو میں تیسری نشست پر بیٹھی محترمہ نے جانچتی ہوئی نظروں سے اس کی طرف دیکھ کر پوچھا تو ضرغام اس کی آنکھوں میں ابھرتی شک کی پرچھائیاںدیکھ کر اپنی بے اختیار امڈ آنے والی مسکراہٹ کو روک نہیں پایا ۔
” مس!“ اس نے جان بوجھ کر وقفہ لیا تاکہ وہ اپنا نام بتائے ۔
” منہار آفندی “ اس کی توقع کے عین مطابق وہ فوراً بول پڑی ۔
” جی تو مس منہار! میں ایک معمولی سا انسان ہوںاور کچھ کام کرنے کی نیت رکھتا ہوں اور مجھے لگتا ہے کہ میں اس این جی او کے ساتھ زےادہ خوش اسلوبی سے وہ کام کر سکوں گا۔ “ ضرغام نے جتلانے کے انداز میں کہا تو منہار اپنی جگہ پہلوبدل کر رہ گئی ۔
” میرے خیال سے اب لائحہ عمل پر بات ہو جائے“ وجاہت حسن کے کہنے پر سب باری باری اپنی تجاویز پیش کرنے لگے اور پھر تمام تجاویز پر غور کرنے کے بعد سب نے ٹی وی پر امدادکی اپیل کرنے پر اتفاق کیا۔
”تو پھر طے رہا کہ ہم ٹی وی کے وقت کے کچھ گھنٹے خرید لیتے ہیںاور یہ کام ضرغام کرے گا اور منہار تم جو یہ تین نام ہم نے سلیبرٹی کے سلیکٹ کیے ہیںان میں سے کسی ایک کو لازمی اس شو میں شرکت کرنے کے لیے راضی کر نا ہے اس کے علاوہ اگر ٹی وی یا فلم کی کچھ اور شخصیات بھی آجائیں تو ہمارے لیے بہت اچھا ہو گا “ وجاہت حسن ہی وہ انسان تھے جنھوں نے اس این ۔ جی ۔ او کی بنیاد رکھی اور پھر آہستہ آہستہ اس میں باقی ممبران شامل ہو تے گئے اس لیے آخری فیصلہ ہمیشہ انھی کا ہوا کرتا تھا ۔ آج بھی انھوں نے سب کے ذمے الگ الگ ڈیوٹی لگائی اور پھر میٹنگ برخاست کرنے کا اعلان کردیا۔

٭ ٭ ٭

پچھلے تین دنوں سے وہ سب مسلسل بھاگ دوڑ میں مصروف تھے ۔
ایکlive show آن ائیر کروانے کے لیے انھیں کافی ذ ہنی اور جسمانی مشقت کرنی پڑ رہی تھی۔ اس پراجےکٹ نے انھیں کھانے پینے کا ہوش بھلارکھا تھا۔ آج بھی وہ ٹی وی سٹیشن سے مغز ذنی کر کے آرہا تھا کہ راستے میں ایک سےلف سروس رےسٹورنٹ کے پاس سے گزرتے ہوئے اسے احساس ہوا کہ صبح جلدی میں وہ ناشتے کے نام پر صرف چائے کا ایک کپ پی کر ہی نکل آیا تھا اور اب بھوک زوروں پر تھی ۔ اس نے بائیک کا رخ اس رےسٹورنٹ کی طرف کر دیا۔ کاﺅنٹر سے برگر اور بوتل لیکر اس نے بیٹھنے کے لیے کسی مناسب جگہ کی تلاش میں نظریں دوڑائیں تو اس کی نظریں کار نر میں گلا س ونڈو کے ساتھ ٹیبل پر اکیلی بیٹھی منہار پر جا کر ٹھہر گئیں۔ وہ گلاس ونڈو پر نظریں جمائے بیٹھی تھی اور اس کے سامنے پڑے گلاس میں شاید کوئی جوس تھا ۔ وہ مسکراتے ہوئے اسی کے پاس چلا آےا۔
” کیا میں یہاں بیٹھ سکتا ہوں؟“ ضرغام نے آہستہ سے ٹیبل بجاتے ہوئے کہا تو وہ جو باہر دیکھنے میں مگن تھی اس کی آواز سن کر چونک اٹھی ۔
” آپ ؟ “
” جی میں “ اس نے ہاتھ میں پکڑی ٹرے ٹیبل پر رکھی اور کرسی کھینچ کر بیٹھ گیا ۔ منہار نے اس کے یوں بیٹھنے پر اگر اسے ویلکم نہیں کہا تھا تو اس کے انداز سے کوئی اعتراض بھی نہیں ظاہر ہوا تھا ، بس خاموشی سے دوبارہ ا پنے گلاس کی طرف متوجہ ہو گئی ۔ ضرغام بہت غور سے اس کے چہرے کے اتار چڑھاﺅ کا جائزہ لے رہا تھا۔
”کیا بات ہے اینی پرابلم ؟“ ضرغام نے کولڈڈرنک کا سپ لیکر دوستانہ انداز میں پوچھا ۔
”نو ناٹ ایٹ آل“اس نے آہستہ سے مسکراتے ہوئے کہا لیکن اس کی مسکراہٹ اس کی آنکھوں کا ساتھ نہیں دے رہی تھی ۔
” اب آپ کہہ رہی ہیں تو مان لیتا ہوںورنہ آپ کی آنکھیں تو خود آپ کے جھوٹ کی چغلی کھا رہی ہیں“ اس نے برگر سے پوری طرح انصاف کرتے ہوئے اس کی طرف دیکھے بغیر کہا ۔
” ہا لوگ اتنے خودغرض ہو چکے ہیں کہ اس خودغرضی کا احساس بھی ان کے اندر مر چکا ہے “ اس کا لہجہ کچھ کھویا ہوا ساتھا ۔
” اگر میں غلط نہیں ہوں تو اس فیلڈ میں آئے آپ کو زیادہ عرصہ نہیں ہو ا ابھی تو آپ نے پہلی ہی سیڑھی پر قدم رکھا ہے ابھی سے گھبرا گئیں “
” آپ کا اندازہ غلط نہیں ۔ میں نے حال ہی میں اپنا ماسٹرز کمپلیٹ کیا ہے اور اس کے ساتھ ہی سوشل ورک کرنے کا بھوت سر پر سوار ہو گیا تو میں نے وجاہت انکل کی این جی او جوائن کر لی یہاں آنے کے بعد احساس ہو رہا ہے کہ تھیوری اور پریکٹیکل میں کتنا فرق ہے “ وہ اب اس ہیجانی کیفیت سے باہر آرہی تھی جس نے اسے ایکدم ہی دنیا سے بیزار سا کر دیا تھا۔
” منہار !تمھاری یہ فیلنگز انوکھی نہیں سوشل ورک میں ماسٹرز کرنے والے جب پریکٹیکل لائف میں آتے ہیںتو کم و بیش ایسے ہی خیالات کا اظہار کرتے ہیں دنیا کو بدلنے کی بات کرنے والے اکثر اپنے آپ کو بھی بدل نہیں پاتے اور اسی سسٹم کا حصہ بن جاتے ہیںیا بننے پر مجبور کر دئیے جاتے ہیں تم بھی آہستہ آہستہ عادی ہو جاﺅ گی ان سب باتوں کی۔ پھر یہ تمھیں اتنا پریشان نہیں کریں گی “ اس نے بڑے ہی غیر محسوس انداز میںتکلف کی دیوار گرائی تھی ۔
” اچھا اس کا مطلب ،آپ عادی ہو چکے ہیں “ منہار نے ایک طنزیہ نظر اس پر ڈالی اور کافی کا سپ لینے لگی ۔
اس کی فطری برجستگی لوٹ آئی تھی اور ضرغام کے ہونٹوں پر مسکراہٹ رینگ گئی ۔
”یس آف کورس لیکن اس کے باوجود میرا passion ، میرے اصول اپنی جگہ پر قائم ہیں کیسے اس کے لیے فائیٹ کرنی پڑتی ہے سسٹم سے اپنے آپ سے“
”جو میںآپ کے خیال میںنہیں کر رہی یا نہیں کر سکتی “ اس کا لہجہ ہلکی سی خفگی لیے ہوئے تھا ۔
” میرا ہر گز ایسا کوئی خیال نہیں بلکہ تم فائیٹ کر رہی ہو اس لیے ڈسٹرب ہو ورنہ مطمئن ہوتیں “ ضرغام نے کہا تو اس کا چہرہ ایکدم پرسکون ہو گیا ۔
” ہاں شاید ایسا ہی ہے ۔ لوگوں کے رویے مجھے بہت ڈسٹرب کرتے ہیں پتا نہیں میں زیادہ حساس ہوں یا لوگ ہی بے حس ہو چکے ہیں اب خان صاحب کو ہی دیکھ لیجیے جب میں نے ان سے اپنے ” کاز “ کے لیے ہمارے ساتھ شامل ہونے کی بات کی تو سب سے پہلے انھوں نے پوچھا کہ انھیں pay کیا کیا جائے گا اور ساتھ ہی یہ بھی چاہتے ہیں کہ ہم ٹی وی پر یہ ظاہر کریں کہ وہ فی سبیل اللہ اس پروگرام میں شرکت کر رہے ہیں کس قدر دوغلے لوگ ہیں، ہر جگہ صرف اپنا فائدہ دیکھتے ہیں“ آخرکار وہ اصل بات زبان پر لے ہی آئی اور اس میں کمال اس کا نہیں بلکہ ضرغام کی سحر انگیز شخصیت کا تھا جو مقابل کو چت کر کے اپنا آپ ظاہر کرنے پر مجبور کر دیتی تھی ۔
” ویسے اگر دیکھا جائے تو اس میں قصور ان کا بھی نہیں۔ جو معاشرے نے انھیں دیا ہے،وہ اسے ہی لوٹا رہے ہیں نجانے کتنی مصیبتوں اور مشکلات کا سامنا کر کے وہ اس مقام تک پہنچے ہیں۔ اب اگر وہ اپنی اس پوزیشن کو کیش کروانا چاہتے ہیں تو اس میں غلط کیا ہے “ اس نے ڈرنک کا آخری سپ لیکر ترچھی نظروں سے اسے دیکھا جو اب سوچ میں ڈوبی ہوئی تھی ۔ ہمیشہ کی طرح اس بار بھی وہ مقابل کو اپنی طرح سوچنے پر مجبور کر چکا تھا۔

٭ ٭ ٭

Live show کی ڈ یٹ آج سے دو دن بعد کی فائنل ہو گئی تھی اور اس لیے وہ سب آج پھر اس میٹنگ روم میں موجود تھے۔
” میر ے خیال سے تمام انتظامات مکمل ہو گئے ہیں“ وجاہت حسن نے باری باری سب کے چہروں پر ایک نظر ڈالتے ہوئے کہا ۔
” سر! آئی ایم شیور کہ جو ٹارگٹ ہم نے سیٹ کیا ہے، اتنی ڈونیشن تو ہم ضرور حاصل کر لیں گے “ منہار بہت ہی پر جوش نظر آرہی تھی۔
” بٹ آئی ایم ناٹ“ ضرغام نے اچانک کہا تو وہ سب چونک کر اسے دیکھنے لگے۔
” واٹ! what did you say? “ منہار نے فوراً کہا۔
” آئی سیڈ آئی ایم ناٹ“ اس کا اطمینان قابل دید تھا ۔
” کیا میں پوچھ سکتی ہوں کہ کیوں“ منہار نے چبھتے ہوئے لہجے میں کہا ۔
” ہاں ضرغام! ہم سب بھی جاننا چاہتے ہیں کہ تم ایسا کیوں کہہ رہے ہو وہ بھی تب جب سب کچھ فائنلا ئز ہو چکا ہے “ وجاہت حسن بھی اب کچھ مضطرب نظر آرہے تھے ۔
” میں یہ نہیں کہہ رہا ہے کہ آپ کا ٹارگٹ achievable نہیں ہے بالکل ہے لیکن اس ٹارگٹ کے لیے جو پراسس اختیار کیا گیا ہے وہ بہت expensive ہو چکا ہے ہمارے اخراجات بہت زیادہ ہیں، ایسے میں “
اس کی بات مکمل ہونے سے پہلے ہی عدیل الزماں بول پڑے،
” ینگ مین! یہ تم نہیں تمھاری ناتجربہ کاری بول رہی ہے میں پچھلے پانچ سالوں میں مختلف این جی اوزکے ساتھ کام کر چکا ہوں اور میں نے اس سے کہیں زیادہexpenses ہوتے دیکھے ہیں جو بعد میں cover up ہو جاتے ہیں ایسے معاملوں میں اتنا رسک تو لینا پڑتا ہے ۔ میرا نہیں خیال کہ ہم نے کچھ غلط کیا ہے کیوں کیا آپ میں سے کوئی اور بھی ضرغام کا ہم خیال ہے “ عدیل الزماں نے باری باری سب پر نظر ڈالتے ہوئے کہا تو ان میں سے ہر کوئی انھیں اپنا حمایتی ہی نظر آیا، ویسے بھی وہ اس این جی او کے سینئر ترین شخص ہونے کے ساتھ ساتھ آرمی کے ریٹائرڈ کرنل بھی تھے، اس لیے وہ سب ان کی رائے کا احترام کرتے تھے ۔
” اوکے ایز یو وش “ ضرغام نے بھی مزید بحث سے احتراز ہی کیاکہ جب کوئی اس کی بات کو اہمیت دینے کو تیار ہی نہیں تھا تو وہ کیوں ان سے حجت کرتا۔
” بہر حال ضرغام کی بات میں وزن تو ہے اور اگر صورتحال وہی ہوگئی جو یہ کہہ رہا ہے تو “ وجاہت حسن تذبذب میں پڑ گئے۔
”وجاہت! کیا اس سے پہلے ہم نے رسک نہیں لیے جو آج گھبرا رہے ہو “ عدیل الزماں انھیں سوچ میں پڑتا دیکھ کر چپ نہ رہ سکے ۔
” میرے خیال سے تو سر! یہ سب سے بہترین لائحہ عمل تھا “ منہار بھی انھی کی ہمنوا تھی۔
” ہاں ٹھیک ہے اب اور ہو بھی کیا سکتا ہے “ انھوں نے ایک گہرا سانس بھر کر نیم رضامندی سے کہا۔ صاف ظاہر تھا کہ کہیں نہ کہیں وہ بھی ضرغام سے متفق ہیں لیکن اتنے سارے لوگوں کی رائے سے انحراف نہیں کر پا رہے تھے۔ ضر غام بھی ان کی مجبوری سمجھ رہا تھا، اس لیے خاموش ہو گیا۔
اور پھر پرسوں ہونے والے live showکے بارے میں کچھ فائنل discussions کی گئیںجس میں ضرغام کی حیثیت ایک خاموش تماشائی سے زیادہ نہ تھی اور اس نے خود بھی اپنی اس حیثیت کو بدلنے کی کوشش نہیں کی تھی ورنہ وہ چاہتا تو ان سب کو قائل کرنے میں اسے زیادہ دیر نہیں لگنی تھی لیکن اس نے ایسا نہیں کیا کیونکہ وہ ابھی خود بھی اتنا sure نہیں تھا۔ یہ اس کا فرسٹ experience تھا ۔ اس کے باوجود اسے لگتا تھا کہ وہ غلط راستے پر جا رہے ہیں، جس کا اس نے اظہار کر دیا ، اگر اس کی رائے کو اہمیت دی جاتی تو شاید اس پر بات کر کے وہ کسی مناسب نتیجے پر پہنچ جاتے لیکن جس انداز میں اس کی بات کو رد کیا گیا تھا، اس نے اسے خاموش ہو جانے پر مجبور کر دیا تھا ۔

٭ ٭ ٭

ضرغام اس وقت منہار کے ساتھ ٹی وی سٹیشن میں ہی موجود تھا ۔ وہ دونوں اس وقت جس کمرے میں موجود تھے وہاں سے وہ نہ صرف کمپئیر اور خان صاحب کو دیکھ رہے تھے بلکہ ان کے درمیان ہونے والی گفتگو بھی سن رہے تھے ۔
کمپئیر کی کسی بات کے جواب میں خان صاحب کہہ رہے تھے ۔
” یہ تباہی کیوں ہوئی کیسے ہوئی ان سوالوں سے زیادہ اہم یہ ہے کہ اس تباہی کا شکار ہونے والے ہمارے ہی بہن بھائی ہیںاور اس وقت انھیں ہماری مدد کی اشد ضرورت ہے تو یہ مت سوچیے کہ آپ کیا دے رہے ہیں بلکہ یہ سوچیں کہ کسے دے رہے ہیں قطرہ قطرہ مل کر ہی سمندر بنتا ہے ، اکیلا قطرہ بے حقیقت ہے لیکن جب وہ اپنی شناخت کھو کر سمندر میں ضم ہو تا ہے تو قلزم بن جاتا ہے اس لیے اپنے ہاتھ میں موجود ایک نوٹ کو دیکھ کر افسردہ مت ہوں کیونکہ ایسے بہت سے ہاتھ مل کر ہی سمندر کا روپ دھاریں گے سوچیے مت اور آگے بڑھ کر اس سمندر میں اپنا حصہ ڈال دیجیے “
” بھئی ماننا پڑے گا کہ اس کی شخصیت کی طرح اس کی باتیں بھی سحر انگیز ہیں لفظوں سے کھیلنے کا فن بخوبی جانتے ہیں موصوف کاش اس کی شخصیت کا وہ روپ میں نے نہ دیکھا ہوتا تو آج اس کی شخصیت اور باتیں مجھ پر بھی وہی سحر طاری کر دیتیںجو اس وقت ٹی و ی دیکھنے والوں پر ہو رہا ہو گا “ منہار بیک وقت اس سے متاثر بھی تھی اور اس کی شخصیت کے دوہرے پن سے نالاں بھی ۔
”کیا میں اپنی اس دن کی بات دہراﺅں “ ضرغام نے مسکراتے ہوئے کہا تو وہ بھی مسکرا اٹھی ۔
” نہیں اس کی ضرورت نہیں “
اسی وقت چپراسی اندر داخل ہوا اور چائے کے دو کپ ٹیبل پر رکھ کر چلا گیا ۔ وہ دونوں گلاس ڈور کے سامنے سے ہٹ کر صوفوں پر آ بیٹھے ۔
”ویسے ایک بات کہوں تم بہت ambitious ہو “ ضرغام نے کپ اٹھا کر ہونٹوں سے لگا لیا۔
” کیا ambitious ہونا غلط ہے ؟“ اس نے سوالیہ انداز میں پو چھا ۔
” نہیں لیکن ambitious ہونے کے ساتھ ساتھ تم بہت شدت پسند بھی ہو اور یہ اگر غلط نہیں تو صحیح بھی نہیں کیونکہ اس کا تمھیں نقصا ن ہو سکتا ہے “
” کیسے ؟“ اس نے دلچسپی سے پو چھا ۔
” یہ شدت پسندی ہی تو ہے جو تمھیں لوگوں سے اتنی جلدی متنفر کر دیتی ہے جبکہ اس فیلڈ میں آنے کے بعد تو تمھیں قدم قدم پر ایسی دوہری شخصیتوں سے واسطہ پڑے گااور جس طرح سے تم بد دلی کا شکار ہو ایسے تو تمھارا کیرئیر شروع ہونے سے پہلے ہی ختم ہو جائے گا “
” میں کیا کروں مجھ سے دوغلا پن برداشت نہیں ہوتا “ اس نے بے بسی سے کہا تو وہ اس کی معصومیت پر مسکرا اٹھا ۔
” تم اسے ایسے کیوں نہیں لیتیں کہ یہ دوہراپن ان کی مجبوری ہے دیکھو تم یہ تو مانتی ہو نا کہ کوئی بھی انسان پرفیکٹ نہیں ہوتا ۔ ہر انسان میں کوئی نہ کوئی خامی یا کمی موجود ہوتی ہے تو اسے بھی تم ان خامیوں میں سے ایک خامی سمجھو “
” ایک ایسی خامی جو شاید اب ان کی ضرورت بن چکی ہے ہے نا “اس نے پھیکی سی ہنسی ہنس کر کہا ۔
” دیٹس رائٹ اب تم صحیح ٹریک پر جا رہی ہو ضرورت اور مجبوری کا چولی دامن کا ساتھ ہے ۔ یہ ضرورت ہی تو ہے جو مجبوری کو جنم دیتی ہے اور انسان کو بے بسی کے بحربےکراں میں پھینک دیتی ہے اب زلزلے سے تباہ شدہ لوگوں کو ہی لے لو۔ اس میں ان بیچاروں کا کیا قصور کہ انھیں یوں اپنے ہی جیسے انسانوں کے سامنے ہاتھ پھیلانے پڑ رہے ہیں لیکن یہ ان کی ضرورت ہے جس نے انھیں مجبور کر دیا ہے بھوک ، پیاس یہ سب زندگی کی ضرورتیں ہی تو ہیں ایسے ہی ہر انسان اپنی اپنی ضرورتوں کے آگے مجبور ہے اور یہی ضرورتیں کبھی کبھی انسانوں سے وہ کچھ کر والیتی ہیں کہ انسانیت بھی شرما جائے لیکن مجبوری“ اس کی باتیں اتنی مدلّل تھیں کہ وہ اسے رد نہیں کر سکی ۔
” شاید آپ ٹھیک کہہ رہے ہیں مجھے سوچنے کا انداز بدلنا ہو گا “اس نے کہا اور چائے پینے میں مشغول ہو گئی ۔

٭ ٭ ٭

شو شروع ہونے سے پہلے ان سب کے دلوں میں کہیں نہ کہیں ایک بے چینی سی تھی۔ ضرغام کی باتوں نے ان کے دل کو چھوا ضرور تھا لیکن وہ ایک ناتجربہ کار نوجوان کی باتوں کو ماننے پر تیار نہ تھے۔ پھر شو کے اینڈ تک یہ بے چینی بھی ختم ہو چکی تھی کیونکہ اس کا response بہت اچھا رہا تھا اور کسی حد تک وہ اپنا ٹارگٹ پورا کرنے میں کامیاب ہو چکے تھے ۔ پہلا مرحلہ بخوبی انجام پا گیا تھا اور اب باری تھی دوسرے اور سب سے اہم مرحلے کی ۔ اب دیکھنا یہ تھا کہ کیاs expense نکال کر بھی نتیجہ ان کی توقع کے مطابق نکلتا ہے یا نہیں۔ یہ دیکھنے کے لیے وہ سب کام میں مشغول ہو گئے۔
خان صاحب کے دئیے گئے قیمتی وقت کا اعزازیہ منہار خود ان کے گھر پہنچا کر آئی تھی جو اس کے بقول اس کے بدلے ہوئے مثبت انداز فکر کی دلیل تھی اور ضرغام نے بھی اس کے اس اقدام کو سراہا تھا ۔ پھر ٹی وی ٹائم کا خرچ اور چونکہ پہلے سے طے شدہ وقت سے ایک گھنٹا زیادہ لے لیا گیا تھا اس لیے انھیں اس کے علیحدہ چارجز ادا کرنے پڑے ۔ اس سے فارغ ہوئے تو وہ بینک جس نے ملک بھر سے آنے والی رقوم کو محفوظ کر نے کے لیے اپنی خدمات پیش کی تھیں ، ان خدمات کے عوض جمع کی گئی کل رقم سے اس نے اپنا پہلے سے طے شدہ percentage share لینے میں ذرا بھی تامل نہ کیا ۔ شو میں شرےک کچھ فلم کی شخصیات کو بھی پے کیا گیا اسی طرح کچھ اور دوسرے چھوٹے موٹے اخراجات نکال کر جب بچی کھچی رقم دیکھی گئی تو ان سب کے دماغ بھک سے اڑ گئے ۔ سب حیران پریشان ہو کر ایک دوسرے کو دیکھ رہے تھے ۔ صرف ایک ضرغام ہی تھا جس کا چہرہ سپاٹ اور ہر قسم کے تاثر سے عاری تھا ۔
” یہ یہ تو کچھ بھی نہیںجمع ہوا “ سب سے پہلے منہار نے ہی اپنے جذبوں کو زبان دی ۔
” حیران تو میں بھی ہوں کہ ایسا کیسے ہو گیا ایسا ہونا تو نہیں چاہیے تھا “ وجاہت حسن نے اپنے بالوں میں ہاتھ پھیرتے ہوئے پریشانی کے عالم میں کہا ۔ سب ہی کم و بیش ایک جیسے خیالات کا اظہار کر رہے تھے ۔
” عدیل صاحب! آپ کچھ نہیں کہہ رہے “ ضرغام نے بغور ان کی طرف دیکھا تو وہ پہلو بدل کر رہ گئے۔
” میں میں کیا کہوں “ ان سے کوئی جواب نہیں بن پڑا ۔
” یہ صورتحال تو تشویش ناک ہے ہماری اتنے دنوں کی محنت کا نتیجہ ناکامی کی صورت میں نکلا ہے ویری بیڈ “ وجاہت حسن نے تاسف سے میز پر مکا مارتے ہوئے کہا ۔
” یہ تو کچھ بھی حاصل نہ ہوا اس سے زیادہ تو ہم چھوٹی موٹی campaign سے اکٹھا کر لیتے اتنی بھاگ دوڑ کے بعد یہ رزلٹ it’s horrible “ منہار بھی بہت مایوس نظر آرہی تھی ۔
ماحول ایکدم ہی بوجھل سا ہو گیا تھا ۔ سب ہی کے چہرے مایوسی سے لٹک گئے تھے ۔ ہر کوئی اپنی اپنی جگہ سوچ میں گم تھا ۔ کمرے میں اچانک گہری خاموشی چھا گئی تھی ۔ ضرغام نے باری باری سب کے اترے ہوئے چہرے دیکھے اور کہنے لگا ۔
” آپ سب تو ایک دم ہی ہمت ہار بیٹھے ہیں یہ ٹھیک ہے کہ ہم ناکام رہے ہیں ۔
لیکن ناکامی کا مطلب یہ تو نہیں کہ آگے بڑھنے کی بجائے ہاتھ پر ہاتھ دھر کر بیٹھ جائیں اور پھر آپ یہ سوچیں کہ ہم نے کم از کم ایک کوشش تو کی اپنے طور سے ان لوگوں کے لیے کچھ کرنے کی ، یہ الگ بات ہے کہ حالات ہمارے خلاف چلے گئے ۔ ورنہ تو ایسی این جی اوز بھی ہیںجن کے پاس ڈونیشن میں حاصل کی گئی رقوم لاکھوں نہیں بلکہ کروڑوں تک پہنچ گئیں لیکن ان لوگوں تک نہ پہنچ سکیں جن کے نام پر اکٹھی کی گئی تھیں ان کے بارے میں کیا کہیں گے آپ جو بہت کچھ کر سکتے تھے لیکن کرنا نہیں چاہتے آپ کم از کم کرنا تو چاہتے ہیں ، کیا ہوا اگر حالات ایک بار ہمارے مخالف ہوگئے تو ہم دوبارہ کوشش کر سکتے ہیں “ ضرغام کے لفظوں نے ان کی ہمت بندھائی اور ان سب کے چہروں پر چھائے مایوسی کے بادل کسی حد تک چھٹنے لگے ۔
” ضرغام ٹھیک کہہ رہا ہے ہمیں حوصلہ نہیں ہارنا چاہیے “ وجاہت حسن پھر سے پُرامید نظر آنے لگے ۔
” تو کیا ہمیں پھر نئے سرے سے شروعات کرنی ہوگی“ منہار نے اچانک پوچھا ۔
” بالکل ہم ایک نئی امید کے ساتھ نئی شروعات کریں گے اور اس یقین کے ساتھ کہ اس بار ہمیں ناکام نہیں ہوناکیونکہ یہ ناکامی صرف ہماری نہیں ہوگی بلکہ ان ہزاروں لوگوں کی ہوگی جو زندگی اور موت کے بیچ ڈول رہے ہیں ۔ ہمیں کامیاب ہو کر انھیں زندگی کی طرف واپس لانا ہے بے شک ایک بار پھر ہم وہیں آکھڑے ہوئے ہیں جہاں سے چلے تھے لیکن ہماری امید زندہ ہے ، ہمارے حوصلے جوان ہیں اور اس بار ہمیں اپنی پوری قوت لگانی ہے اورزندگی کی اس جنگ کو جیتنا ہے “ ضرغام نے اپنے مخصوص مسحور کن انداز میں کہا تو ان سب کے چہروں پر پھر سے وہی خود اعتمادی لوٹ آئی جو اس پراجیکٹ کو شروع کرتے ہوئے تھی ۔

٭ ٭ ٭

بارے KAHAANY.COM

Check Also

پٹ جھڑ کے موسم میں ۔۔۔ از ۔۔۔ زہرہ شفیق

پت جھڑ کے موسم میں ۔۔۔ زہرہ شفیق حرا پلیز ایک بار ہاں کہہ دو۔ …

83 comments

  1. thank you for sharing with us, I conceive this website genuinely stands out : D

  2. Very well written post. It will be beneficial to anybody who usess it, as well as me. Keep doing what you are doing – for sure i will check out more posts.
    tight

  3. Mismo la urbanizaciГіn una
    symone

  4. Admiring the time and effort you put into your site and in depth information you provide. It’s awesome to come across a blog every once in a while that isn’t the same outdated rehashed information. Fantastic read! I’ve saved your site and I’m including your RSS feeds to my Google account.

  5. First off I want to say terrific blog! I had a quick question in which I’d like to ask if you do not mind. I was curious to find out how you center yourself and clear your mind before writing. I’ve had difficulty clearing my thoughts in getting my ideas out. I do enjoy writing but it just seems like the first 10 to 15 minutes are usually wasted simply just trying to figure out how to begin. Any recommendations or hints? Many thanks!

  6. Paquet rapide puis soigné. 360 frontal https://www.youtube.com/watch?v=ny8rUpI_98I impeccable.

  7. Keep on working, great job!

  8. obviously like your website but you have to check the spelling on several of your posts. A number of them are rife with spelling problems and I in finding it very bothersome to tell the truth on the other hand I’ll certainly come back again.

  9. Vi possono essere errori?
    ravi

  10. Excellent weblog right here! Additionally your website so much up very fast! What host are you the usage of? Can I get your affiliate hyperlink on your host? I desire my web site loaded up as quickly as yours lol

  11. I just could not leave your site before suggesting that I actually enjoyed the usual info an individual provide on your guests? Is gonna be back regularly to inspect new posts

  12. Hello there! This article could not be written any better! Looking at this post reminds me of my previous roommate! He always kept preaching about this. I will send this article to him. Fairly certain he will have a very good read. Thank you for sharing!

  13. Hi, I log on to your blog daily. Your story-telling style is witty, keep it up!

  14. Credo che lei abbia sbagliato. Sono sicuro. Scrivere a me in PM, ti parla.
    Dirty teenage girlie spreading her wet and sticky pussylips

  15. je garderai le silence peut-ГЄtre simplement
    Rexuiz FPS Game

  16. Pretty! This has been an incredibly wonderful
    post. Thank you for supplying this information.

  17. Very good post. I’m facing a few of these issues as well..

  18. Everything is very open with a clear clarification of the challenges.

    It was really informative. Your site is very useful.

    Many thanks for sharing!

  19. I’m amazed, I must say. Rarely do I come
    across a internet page that’s both equally educative and entertaining,
    and without a doubt, you’ve hit the nail on the face.
    The issue is an issue that too few folks are speaking intelligently about.
    Now i’m very happy that I found this in my search for something concerning this.

  20. Good post. I will be dealing with many of these issues as well..

  21. Incredible! This blog looks exactly like my old one! It’s on a completely different subject but it has pretty much the same page layout and design. Outstanding choice of colors!

  22. Thanks for one’s marvelous posting! I genuinely enjoyed reading it, you may be a great author.I will make sure to bookmark your blog and will eventually come back someday. I want to encourage continue your great work, have a nice day!

  23. I am extremely impressed with your writing skills and also with the layout on your blog. Is this a paid theme or did you customize it yourself? Anyway keep up the excellent quality writing, it is rare to see a nice blog like this one nowadays.
    click here http://en.fahua123.com/home.php?mod=space&uid=508300&do=profile&from=space

  24. Asking questions are in fact good thing if you are not understanding anything totally, however this paragraph provides good understanding even.
    home page http://kenheritage.com/index.php/component/k2/itemlist/user/1362896

  25. This piece of writing will help the internet visitors for building up new web site or even a weblog from start to end.
    view my blog http://english.aapa.org.au/?option=com_k2&view=itemlist&task=user&id=148496

  26. Great info. Lucky me I found your website by accident (stumbleupon).

    I have book-marked it for later!

  27. Incredible! This blog looks just like my old one I actually felt my brain growing when I browsed your blog. Got sucked into your page for the last hour. You should be thanked more often. good job on this article!

  28. cool work, keep it up. This stuff is great!

  29. I love articles like this one but I find myself spending hours simply browsing and reading. I shared this on my page and 22 of my friends have already read it! Your perspective is beyond refreshing. I appreciate you. You are my savior.

  30. Your article is great! It is rare to see a nice blog like this one these days.

  31. Hey, that is a clever way of thinking about it. Exceptionally well written!

  32. Your points are well formed. I hope you are making money off this website Any additional suggestions or hints?

  33. Son of a gun! Geez, that is unbelievable. I have learned new things through your write up.

  34. Wow! Finally I got a web site from where I be capable of actually take valuable facts
    concerning my study and knowledge.

  35. Having read this I believed it was very informative.
    I appreciate you spending some time and energy to put this informative article together.
    I once again find myself spending a significant amount of
    time both reading and leaving comments. But so
    what, it was still worth it!

  36. Very nice article. I absolutely love this site. Keep it up!

  37. Greetings! Very useful advice in this particular
    post! It is the little changes that will make the greatest changes.
    Thanks for sharing!

  38. fantastic publish, very informative. I ponder why the opposite specialists of this sector don’t realize this.
    You should continue your writing. I am confident, you have a great readers’ base
    already!

  39. Yes! Finally someone writes about instacart promo code 2017.

  40. I am bored to death at work so I decided to browse your blogs on my iphone during lunch break. You are more helpful than you realize. You remind me of my aunt back in New York.

  41. Very nice website. You remind me of my mom. You are more fun than bubble wrap. I really love your writing style and how well you express your thoughts.

  42. I feel like I should send you cash for this amazing material. There are certainly a lot of stuff to take into consideration. Very nice blogs.

  43. Thank you for writing this great article. Extremely helpful write up.

  44. If some one needs expert view concerning blogging afterward
    i suggest him/her to go to see this webpage, Keep up the good job.

  45. Have you ever considered about adding a little bit more than just your articles?
    I mean, what you say is fundamental and all. Nevertheless imagine if
    you added some great images or video clips to give your posts more,
    "pop”! Your content is excellent but with pics and
    clips, this blog could definitely be one of the best in its niche.
    Very good blog!

  46. Hi there! I just wanted to ask if you ever have any problems with
    hackers? My last blog (wordpress) was hacked and I ended up losing
    many months of hard work due to no back up. Do you have
    any methods to stop hackers?

  47. Can I just now say what relief to find someone who actually knows what theyre dealing with on-line. You certainly discover how to bring a difficulty to light to make it critical. The best way to need to check this out and see why side of the story. I cant believe youre less popular since you also absolutely hold the gift.

  48. Hello! I know this is somewhat off-topic however I had to ask.
    Does building a well-established website like yours require a
    large amount of work? I’m completely new to operating
    a blog but I do write in my journal every day. I’d like to start a blog so I
    will be able to share my own experience and thoughts online.

    Please let me know if you have any suggestions
    or tips for new aspiring bloggers. Thankyou!

  49. very nice post, i actually love this web site, carry on it

  50. Attractive section of content. I just stumbled upon your blog and in accession capital to assert that I acquire in fact enjoyed account your blog posts.

    Any way I’ll be subscribing to your augment and even I
    achievement you access consistently quickly.

  51. Its such as you learn my mind! You seem to know so much about this, like you wrote the
    e-book in it or something. I think that you just could
    do with some p.c. to pressure the message house
    a bit, however other than that, that is excellent blog.
    A great read. I will certainly be back.

  52. Businesses are erasing the boundaries between nations and as a fruit, communication play the indispensable part
    in expanding your reach as entrepreneur. Communication, in this matter,
    is the knack to convert between any lingua franca yoke there is and
    the rewrite services explode has made it disinterested easier.
    You righteous have to coerce unwavering the company you depute
    your decipherment offers adequate accommodation, which can be verified beside checking the reviews of the particular
    one.

  53. Thank you for some other great article. The place else may just anybody
    get that type of information in such a perfect way of writing?
    I have a presentation subsequent week, and I am on the look for such info.

  54. Great, bing took me stright here. thanks btw for info. Cheers!

  55. Its like you learn my mind! You appear to grasp so much about this, like you wrote the e book in it or something.
    I believe that you simply can do with some p.c. to force the message home a bit,
    but other than that, this is wonderful blog. A fantastic read.
    I will definitely be back.

  56. Very great post. I simply stumbled upon your blog and wanted to say that
    I’ve truly enjoyed browsing your weblog posts. In any case I’ll be subscribing for your rss
    feed and I’m hoping you write again soon!

  57. great issues altogether, you just gained a emblem new reader.
    What could you suggest about your submit that you simply made a few days ago?
    Any certain?

  58. fantastic issues altogether, you simply received a new reader.
    What may you recommend in regards to your
    post that you made a few days in the past?
    Any certain?

  59. When I initially commented I clicked the "Notify me when new comments are added”
    checkbox and now each time a comment is added I get four emails
    with the same comment. Is there any way you can remove me from
    that service? Thank you!

  60. Heya i am for the first time here. I found this board and I find It really useful & it
    helped me out much. I hope to give something back and aid others like you aided me.

  61. Outstanding story there. What occurred after? Thanks!

  62. I like the helpful info you provide in your articles.
    I will bookmark your blog and check again here regularly. I am quite certain I’ll learn lots of new stuff right here!
    Good luck for the next!

  63. After going over a number of the blog articles on your site, I really like
    your way of blogging. I added it to my bookmark webpage list and will be checking back soon. Please check out my web site too and let me
    know your opinion.

  64. WOW just what I was searching for. Came here by searching for things you need to go camping

  65. I am sure this post has touched all the internet people, its really really fastidious piece of writing on building up new web site.

  66. Terrific article! That is the kind of information that are supposed to be
    shared across the net. Shame on Google for
    no longer positioning this post upper! Come on over and visit my website .

    Thanks =)

  67. Aw, this was an incredibly nice post. Taking the time
    and actual effort to generate a great article… but what can I say…
    I procrastinate a whole lot and don’t seem to get anything done.

  68. I enjoying, will read more. Cheers!

  69. Great, google took me stright here. thanks btw for post. Cheers!

  70. Hi there colleagues, its impressive article regarding educationand entirely defined,
    keep it up all the time.

  71. Wonderful blog! Do you have any suggestions for aspiring
    writers? I’m planning to start my own site soon but I’m a little lost
    on everything. Would you suggest starting with a free platform like WordPress
    or go for a paid option? There are so many choices
    out there that I’m completely overwhelmed
    .. Any ideas? Appreciate it!

  72. I really like your blog.. very nice colors & theme.
    Did you create this website yourself or did you hire someone to
    do it for you? Plz reply as I’m looking to create my own blog and would like
    to find out where u got this from. many thanks

  73. Thanks for one’s marvelous posting! I genuinely enjoyed reading it,
    you can be a great author.I will be sure to bookmark your blog and will eventually come back at some point.

    I want to encourage you to continue your great job, have a nice evening!

  74. Great, google took me stright here. thanks btw for this. Cheers!

  75. Hello to every one, it’s truly a nice for me to pay a quick visit this website, it includes important Information.

  76. We are a group of volunteers and starting a brand new scheme in our community.
    Your website provided us with useful information to work on. You’ve performed a formidable task and our whole community might be thankful to you.

  77. Your means of telling all in this article is truly nice, all
    be able to without difficulty understand it, Thanks a lot.

  78. you are truly a just right webmaster. The site loading pace is amazing.
    It kind of feels that you are doing any distinctive trick. Also, The contents
    are masterpiece. you have performed a magnificent activity in this subject!

  79. Hey There. I found your blog using msn. This is a very
    well written article. I’ll make sure to bookmark it and come back to read more of
    your useful information. Thanks for the post. I’ll definitely
    comeback.

  80. It’s an remarkable paragraph designed for all the internet viewers;
    they will obtain advantage from it I am sure.

  81. Great website. Plenty of useful info here. I am sending it to some buddies ans
    also sharing in delicious. And obviously, thanks in your sweat!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Translate »
error: Content is protected !!