مسکن / سسپنس / گمشدہ جنت ۔۔۔۔ از ۔۔۔۔ منظر امام

گمشدہ جنت ۔۔۔۔ از ۔۔۔۔ منظر امام

اکبر خان کے لئے دنیا بہت خوبصورت اور پرسکون تھی۔ اس نے لکڑی کا ایک خوبصورت کاٹج بنا رکھا تھا۔ جس کے باہر پھولوں کی قطاریں تھیں اور ان سے پرے دور تک سبزہ ہی سبزہ۔
اور پھر بہت فاصلے پر ایک پہاڑ جس پر ہمیشہ ایک نیلی سی دھند چھائی رہتی۔ کاٹج کے بالکل پیچھے تازہ پانی کا ایک چشمہ بہہ رہا تھا۔ اس نے سبزیاں اُگا رکھی تھیں وہاں ناریل کے درخت بھی تھے۔
وہ مہینے میں صرف ایک بار کچھ رقم لے کر شہر کی طرف چلا جاتا جو وہاں سے کافی فاصلے پر تھا۔ وہ مہینے بھر کی ضروریات کی چیزیں شہر کے بازار سے خرید لیاکرتا۔
شہر کے ایک بینک میں اس کا بینک اکاﺅنٹ بھی تھا۔ وہ اس بینک سے پیسے نکلواتا۔ خریداری کرتا اور اپنے کاٹج کی طرف روانہ ہو جاتا۔
اس کے پاس کسی قسم کی سواری نہیں ہوتی تھی۔ اس نے ایسی کوئی چیز ہی نہیں رکھی تی جس سے یہ اندازہ ہو سکے کہ وہ کہاں رہتا ہے۔
ٹی وی، ریڈیو، موبائل فون۔ اس قسم کی کوئی چیز اس کے پاس نہیں تھی۔ اس کا کسی سے کوئی رابطہ نہیں تھا۔ اس کا کاٹج قدرتی طور پر ایک ایسے مقام پر پوشیدہ تھا جہاں کسی کی نظر نہیں جا سکتی تھی۔ یا کسی کو گمان نہیں ہو سکتا تھا کہ یہاں کوئی رہا کرتا ہے۔
اس نے کسی کو بھی اپنا پتا نہیں بتایا تھا۔ شہر میں دو تین دوست تھے جن سے ان کے گھر جا کر مل لیا کرتا۔ وہ جب اس کا پتا معلوم کرتے تو وہ ٹال دیا کرتا۔
کاٹج کی زندگی انتہائی خاموش اور پرسکون تھی۔ جیسے ٹھہری ہوئی جھیل۔ کوئی ہلچل نہیں، کوئی شور نہیں۔ اکبر خان کے پاس اسلحے یا ہتھیار نام کی کوئی چیز نہیں تھی۔
وہاں اس کی ضرورت ہی نہیں تھی۔ اردگرد یا تو خوبصورت پرندے ہوا کرتے یا پھر دوڑتے ہوئے ہرن۔ جن سے اسے کسی قسم کا خطرہ نہیں تھا۔
خطرہ تو انسان سے ہوتا ہے اور جہاں وہ تھا وہاں انسان نام کی کوئی چیز نہیں تھی۔
ایک دن جب وہ اپنے مہینے کا سودا سلف لینے شہر کی طرف گیا ہوا تھا تو اسے ایک بچہ دکھائی دے گیا۔ وہ بچہ ایک ہوٹل کے باہر کھڑا تھا۔ اس کی عمر دس گیارہ برس کی ہو گی۔ بہت خوبصورت اور معصوم سا۔
وہ اس طرح حسرت زدہ نگاہوں سے ہوٹل کی طرف دیکھ رہا تھا جیسے اسے بہت زور کی بھوک لگی ہو اور وہ ہوٹل سے باہر آنے والے کھانے کی خوشبوﺅں کو اپنی سانسوں کے ذریعے اپنے بدن میں جذب کر رہا ہو۔
اکبر خان اس کے پاس جا کر کھڑا ہو گیا۔ ”کیا بات ہے بیٹے کیا بھوک لگی ہے؟“ اس نے پوچھا۔
”ہاں۔“ اس لڑکے نے اپنی گردن ہلادی۔
اکبر خان جب شہر آتا تھا ایک وقت کا کھانا اسی ہوٹل میں کھایا کرتا تھا۔ اس وقت بھی وہ کھانے ہی کے لئے ہوٹل میں جا رہا تھا کہ وہ بچہ دکھائی دے گیاتھا۔
”چلو آﺅ میرے ساتھ۔“ اکبر خان نے کہا۔
لڑکا ہچکچاتا رہا، پھر اس کے ساتھ ہولیا۔ دونوں ہوٹل میں داخل ہوئے اور ایک میز کے پاس آکر بیٹھ گئے۔ ویٹر کو کھانے کا آرڈر دینے کے بعد اکبر خان نے پچھا۔ ”کیا نام ہے تمہارا؟“
”ندیم!“ لڑکے نے جواب دیا۔
”واہ ندیم یعنی دوست۔“ اکبر خان مسکرا دیا۔“
”کہاں رہتے ہو؟“
”کہیں نہیں۔“ لڑکے نے جواب دیا۔
”کیا مطلب؟“ اکبر خان حیران رہ گیا۔
”میرا کوئی گھر نہیں ہے۔“ لڑکے نے بتایا۔
”میں ادھر اُدھر رہتا ہوں۔“
”حیرت ہے۔“ اکبر خان بڑبڑایا۔
”تمہارے ماں باپ تو ہوں گے تمہارے رشتے دار وغیرہ۔“
”نہیں کوئی نہیں ہے اور ہوگا بھی تو مجھے نہیں معلوم۔“
اس لڑکے نے اپنی جو کہانی سنائی وہ بہت المناک تھی۔ ماں باپ کے مرنے کے بعد اس کا ایک چاچا اس کو ساتھ لے گیا تھا جہاں اس سے رات دن کام کرایا جاتا۔ کیونکہ اس کی چاچی ایک بے رحم عورت تھی۔
چاچا بھی مر گیا تھا۔ ندیم نے وہ گھر چھوڑ دیا اور ادھر اُدھر بھٹکنے لگا۔ کبھی کسی ہوٹل میں کام کر لیا، کبھی کسی کے مکان میں نوکری کرلی۔ اس طرح اس کے دن گزر رہے تھے اور گزشتہ کئی دنوں سے اس کے پاس کوئی کام نہیں تھا اور نہ ہی پیسے تھے کہ وہ کسی ہوٹل میں کچھ کھا سکتا۔
اس کی کہانی سن کر اکبر خان سوچ میں پڑ گیا۔ لڑکا شریف اور معصوم سا دکھائی دیتا تھا۔ حالات نے اس کے ساتھ کوئی اچھا برتاﺅ نہیں کیا تھا۔ پھر اسے کیا کرنا چاہئے۔ کھانا کھا کر اور کچھ پیسے دے کر اسے رخصت کر دے یا پھر اپنے ساتھ رکھ لے۔ پھر اس نے ایک فیصلہ کرتے ہوئے اس بچے سے پوچھا۔ ”یہ بتاﺅ، کیا تم میرے ساتھ رہ سکتے ہو؟“
”آپ کے ساتھ؟“ بچے نے حیران ہو کر اس کی طرف دیکھا۔
”ہاں۔ میرے ساتھ میں اکیلا رہتا ہوں۔“
”کہاں رہتے ہیں؟“
”یہ میں نہیں بتا سکتا۔“ اکبر خان نے کہا۔ ”میں نے بڑی مشکلوں سے اپنی ایک جنت بنائی ہے۔ میں نے سوچا ھےکہ میں ساری زندگی اپنی جنت میں رہوں گا لیکن تم مل گئے ہو اور تم پر ترس بھی آ رہا ہے۔ میں تمہیں اپنے ساتھ رکھنے کو تیار ہوں۔ بتاﺅ کیا کہتے ہو؟“
”انکل! میرا تو کوئی ٹھکانا نہیں ہے۔“ اس نے کہا۔ ”میں آپ کے ساتھ رہنے کو تیار ہوں۔“
”لیکن وہاں رہنے کی کچھ شرائط ہوں گی۔ میں نہیں چاہتا کہ کوئی میری بنائی ہوئی جنت کو برباد کرے۔“
اس بچے کی سمجھ میں نہیں آیا تھا کہ ان باتوں سے اکبر خان کی مراد کیا ہے۔ وہ بس خاموشی سے اس کی صورت دیکھتا رہا۔
”اچھا یہ بتاﺅ، کوئی سامان وغیرہ ہے تمہارے پاس؟“
”نہیں، بس یہ کپڑے ہیں جو میں نے پہن رکھے ہیں۔“
”چلو ٹھیک ہے۔ کھانا کھاﺅ میرے ساتھ چلو۔ میں تمہیں کچھ کپڑے دلادوں گا۔“
”اکبر خان نے اس بچے کے سائز کے کچھ کپڑے خریدے اور شام ہوتے ہوتے یہ دونوں شہر سے باہر نکل گئے۔ بچہ بڑی مستقل مزاجی کے ساتھ اس کے ہمراہ پیدل چلا آرہا تھا۔
پھر بہت دیر بعد اس نے دریافت کیا۔ ”انکل، کیا آپ کا گھر بہت دور ہے؟“
”ہاں۔ شہر سے بہت دور۔“ اکبر خان نے بتایا۔ ”وہاں کوئی سواری نہیں جاتی۔“
بچے نے پھر کوئی سوال نہیں کیا۔ وہ اکبر خان کے ساتھ چلتا رہا۔
اکبر خان نے اس کے لئے کچھ کتابیں بھی لے لیں تھیں۔ کچھ بسکٹ اور چاکلیٹ وغیرہ بھی تاکہ بچے کا دل لگا رہے۔ اس نے پہلی بار کسی کے لئے اس قسم کی شاپنگ کی ہوگی۔
اسے وہ بچہ بہت اچھا لگا تھا۔ خاموش طبیعت، اس کی آنکھوں میں سوائے اداسیوں کے اور کچھ بھی نہیں تھا۔
کئی گھنٹوں کے سفر کے بعد بالآخر وہ اس وادی میں پہنچ ہی گئے جہاں اکبر خان نے اپنا کاٹج بنا رکھا تھا۔ آج چونکہ وہ بچہ بھی اس کے ساتھ تھا۔ اس لئے اکبر خان کی رفتار بہت کم رہی تھی۔ بلکہ بچے کے خیال سے وہ دو مرتبہ کچھ دیر کے لئے سستانے بھی لگا تھا۔
اس وادی میں اندھیرا تھا۔ گھپ اندھیرا۔ وہ بچہ اس کے ساتھ چل رہا تھا۔ اس نے محسوس کیا جیسے وہ بچہ خوفزدہ ہو، وہ چاروں طرف اندھیرے میں دیکھنے کی کوشش کرتا تھا۔
”کیا بات ہے، کیا ڈر لگ رہاہے؟“ اکبر نے پوچھا۔
”انکل، یہ کون سی جگہ ہے؟“
”یہی میری جنت ہے۔“ اکبر خان نے جواب دیا۔
”گھبراﺅ نہیں کل تک تمہارا ڈر نکل جائے گا اور تمہارا یہاں سے جانے کو دل نہیں چاہے گا۔“
کاٹج میں آنے کے بعد اس نے بچے کا ہاتھ تھام کر اسے صوفے پر بٹھا دیا اور لیمپ روشن کر دیا۔ لیمپ کی روشنی میں بچے نے گردن گھما کر چاروں طرف دیکھا۔ کچھ کہنے کی کوشش کی پھر خاموش ہو رہا۔
اکبر خان نے سب سے پہلے چائے بنائی، چائے پینے کے دوران اس بچے کا خوف کسی حد تک کم ہو گیا تھا۔ اس نے سوال کیا۔ ”انکل، کیا آپ یہاں اکیلے رہتے ہیں؟“
”ہاں۔ اکیلے رہتا ہوں لیکن اب تم میرے ساتھ ہو۔“
”یہاں تو بہت ڈر لگتا ہوگا۔“
اکبر خان ہنس پڑا۔ ”کس بات کا ڈر۔ ڈر تو انسانوں سے ہوتا ہے اور یہاں دور نزدیک…. کوئی انسان نہیں ہے، اس لئے کوئی ڈر نہیں ہے۔“
اس بچے کے لئے دوسری صبح انتہائی خوشگوار اور بہت حیرت انگیز تھی۔ وہ آنکھیں پھاڑ پھاڑ کر کاٹج سے باہر آکر دیکھ رہا تھا۔ دور تک بچھا ہوا سبزہ، یہاں پہاڑیوں پر اتری ہوئی نیلی دھند، چہچہاتے ہوئے پرندے اور اچھل کود کرتے ہوئے ہرن۔
”انکل! یہ…. یہ تو بہ خوبصورت ہے۔ بہت زبردست۔“
”کیسی لگی یہ جگہ؟“
”انکل آپ نے اسے جنت کہا تھا تو یہ جنت ہی کی طرح ہے۔“
”اب یہاں رہنے کی شرط بھی سن لو۔ تم کبھی کسی پرندے یا جانور کو نقصان نہیں پہنچاﺅ گے۔“ اکبر خان نے کہا۔ اور نہ ہی پکڑنے کی کوشش کرو گے۔ یہ تمہارے دوست ہیں۔ تم ان کے ساتھ دوست کی طرح رہو گے۔“
”ٹھیک ہے انکل یہ بہت پیارے ہیں۔“
”تو بس اب تمہیں ان ہی کے ساتھ رہنا ہے۔“
وہ بچہ ندیم کچھ دنوں کے بعد اس ماحول کا ایک حصہ بن چکا تھا۔ وہ وہاں بہت خوش تھا۔ پرندے اس کے دوست تھے۔ ہرن اس کے پاس آتے رہتے، وہ دن بھر ان کے ساتھ کھیلتا رہتا، پوری وادی میں گھومتا رہتا۔ کوئی خوف نہیں، یہاں کوئی اسے نقصان پہنچانے والا نہیں تھا۔
اکبر خان نے اسے ابتدائی تعلیم بھی دینی شروع کر دی تھی۔ رات کو کاٹج میں واپس آکر لیمپ کی روشنی میں وہ اپنی کتابیں نکال کر بیٹھ جاتا۔
مہینے میں ایک دن اکبر خان کے ساتھ وہ شاپنگ کے لئے شہر کی طرف آجاتا۔ یہاں وہ ضروریات کی چیزیں خریدتے۔ ہوٹل میں کھانا کھاتے اور شام ہوتے ہوتے اپنے کاٹج کی طرف واپس آجاتے۔
ایک بار شہر میں کھلونوں کی ایک دکان کے سامنے کھڑے ہو کر ندیم نے ایک کھلونا پستول کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا۔ ”انکل مجھے یہ دلادیں۔“
اکبر خان کو ایسا لگا جیسے اس کے بدن سے خون نچوڑ لیا گیا ہو۔ ”کیوں؟ اس کی کیا ضرورت ہے۔“
”یہ کھلونا پستول ہے انکل۔“
”ہاں جانتا ہوں میں اور اس قسم کے کھلونوں نےہی ہمارے معاشرے کا یہ حال کر دیا ہے۔ پیدا ہوتے ہی بچوں کے ہاتھوں میں پستول پکڑا دیتے ہیں۔ رفتہ رفتہ ان کے ہاتھوں میں اصلی پستول آجاتے ہیں اور وہ قتل و غارت گری شروع کر دیتے ہیں۔ تمہیں میں یہ نہیں دلا سکتا۔ تم کچھ اور لے سکتے ہو اور ہاں اس جنت میں رہنے کی ایک شرط یہ بھی ہے کہ تمہارے پاس اس قسم کی کوئی چیز نہیں ہوگی۔ کوئی پستول نہیں، کوئی اسلحہ نہیں۔ چاہے وہ کھلونا ہی کیوں نہ ہو، سمجھ گئے۔“
”جی انکل۔“ ندیم نے سعادت مندی سے اپنی گردن ہلادی۔
دن گزرتے چلے گئے۔ ایک سال، دو سال، تین سال۔ ندیم اب اکبر خان کا دایاں بازو بن گیا تھا۔ وہ اس کے ساتھ مل کر سبزیاں بویا کرتا، سبزیاں توڑا کرتا، فالتو گھاس صاف کرتا، چشمے سے پانی بھرکر لاتا۔
اکبر خان کی محنت سے اس نے اچھا خاصا لکھنا پڑھنا سیکھ لیا تھا۔
ایک بار اکبر خان کی طبیعت ٹھیک نہیں تھی۔ اس نے ندیم سے کہا۔ ”بیٹے! اب تم بڑے ہو گئے ہو تم اکیلے شہر جا کر بینک سے پیسے کیش کرا کے مہینے بھر کا سودا خرید سکتے ہو؟“
”جی ہاں انکل۔ یہ کوئی مشکل کام نہیں ہے۔“
”تو اس بار تم چلے جاﺅ میری طبیعت ٹھیک نہیں ہے۔ اور واپسی میں میرے لئے دوا بھی لیتے آنا۔“
ندیم شہر پہنچ گیا۔
اب وہ بچہ نہیں رہا تھا۔ سترہ اٹھارہ برس کا ایک صحت مند نوجوان تھا۔ اس وادی کی کھلی فضاﺅں، صاف اور صحت مند خوراک اور چشمے کے پانی نے اسے گبروبنا دیا تھا۔
اس نے اکبر خان کے کہنے کے مطابق بینک سے پیسے لئے اور کچھ کھانے کے لئے ہوٹل میں بیٹھ گیا۔ ابھی وہ آرڈر دے کر فارغ ہی ہوا تھا کہ کسی نے اس کے شانے پر ہاتھ مارتے ہوئے پوچھا۔ ”اوئے تو ندیم ہے نا؟“
ندیم نے ہاتھ مارنے والے کی طرف دیکھا۔ وہ بیس بائیس سال کا ایک نوجوان تھا۔ سیاہ رنگت اور چھوٹی چھوٹی آنکھیں اور چہرے پر ہلکی ہلکی سی مونچھ۔
”ہاں! میں ندیم ہوں اور تم؟“
”کمال ہے یار، تو مجھے بھول گیا۔“ وہ بے تکلفی سے سامنے والی کرسی پر بٰٹھ گیا۔ ”میں محبوب ہوں۔ یاد کر ہم سب کا محبوب تیرا میرا محبوب۔“
ندیم کو یاد آگیا تھا۔ اس نے جس زمانے میں ہوٹل میں بیرا گری کی تھی۔ محبوب کاﺅنٹر پر بیٹھا کرتا تھا۔ وہ اس وقت ہی سے ایک چالاک اور ذہین قسم کا لڑکا تھا۔
”ہاں یاد آگیا۔“ ندیم نے گرم جوشی کے ساتھ ہاتھ ملایا۔ ”کیا حال ہے تمہارا؟“
”میرا حال چھوڑ اپنا بتا۔ لگتا ہے ٹھاٹ کی زندگی گزار رہا ہے۔ بڑھیا کپڑے، چہرے سے ہی خوشحالی ٹپک رہی ہے۔ کیا کہیں کوئی لمبا ہاتھ مار لیاہے؟“
”یار، آج کل میں اپنے انکل کے ساتھ رہ رہا ہوں۔“ ندیم نے بتایا۔ ”وہ میرا بہت خیال رکھتے ہیں بہت پیار کرتے ہیں مجھ سے۔“
”یار تو خوش قسمت ہے کہ تیرا کوئی انکل بھی ہے۔“ محبوب نے ایک گہری سانس لی۔ ”یہاں تو یہ حال ہے کہ سالا دور نزدیک تک کوئی ہے ہی نہیں۔ سب ہی ٹکھانے لگ گئے۔“
ندیم نے اس کے لئے بھی کھانے کا آرڈر دے دیا تھا۔ محبوب بار بار شک آمیز انداز سے اس کی تعریف کر رہا تھا۔ ”یار! تیرے تو ٹھاٹ ہیں ادھر اپنا یہ حال ہے کہ ایک ایک پائی کو محتاجی ہے۔ کوئی کام ہی نہیں ہے۔“
”یعنی تم کچھ بھی نہیں کر رہے؟“
نہیں بھائی۔ آج کل کوئی کسی کو کام شام نہیں دیتا۔ سفارش ضروری ہے۔ اب تم سے کیا چھپانا۔ ایک چکر میں دو سال جیل بھی رہ کر آیا ہوں۔“
”جیل…. وہ کیوں؟“
”ایک کام پکڑا تھا۔ بس تقدیر نے دھوکا دے دیا۔ ورنہ میرے پاس بھی اچھے خاصے پیسے ہوتے۔“
”افسوس ہوا یہ سب سن کر۔“ ندیم نے کہا۔
”یہ بتا آج کل رہ کہاں رہا ہے؟“ محبوب نے پوچھا۔
”انکل کے ساتھ۔“
”انکل کے ساتھ رہ رہا ہے لیکن کہاں، کس علاقے میں؟“
”یہ نہیں بتا سکتا۔“ ندیم نے انکار میں گردن ہلادی۔
”نہیں بتا سکتا۔“ محبوب حیرت زدہ ہو گیا۔ ”ابے کیوں نہیں بتا سکتا کیا کسی خفیہ جگہ رہ رہا ہے۔“
”ایسا ہی سمجھ لو۔ بتا نہیں سکوں گا۔“
”تیری مرضی۔“ محبوب کچھ ناراض ہو گیا تھا۔ ”اب اس میں کون سی چھپانے والی ہوگئی خیر ، میں اب خود سے تو نہیں پوچھوں گا، تیرے جی میں کبھی آجائے تو بتا دینا۔“
دونوں نے کھانا کھایا۔ چلتے ہوئے ندیم نے اسے دو سو روپے بھی دے دیئے تھے۔ ”رکھ لے یار! ہو سکتا ہے تیرے کام آجائیں۔“
”ابے یار! بہت کام آئیں گے۔ کیوں آج میرے پاس کچھ بھی نہیں تھا۔“
ندیم شاپنگ وغیرہ سے فارغ ہو کر شام تک کاٹج واپس آگیا تھا۔ اس نے اکبر خان کے لئے کچھ دوائیں بھی لے لی تھیں۔ دوسرے دن سے زندگی پھر اپنے معمول پر آگئی تھی۔
دوسرے مہینے اکبر پھر نہیں جا سکا تھا۔ اس نے ندیم ہی کو بھیج دیا تھا۔ شہر میں اس کی ملاقات ایک بار پھر محبوب سے ہو گئی تھی۔ جو اسے دیکھتے ہی شکایت کرنے لگا تھا۔ ”حد ہو گئی یار! تو کہاں غائب ہو گیا تھا۔ میں تو اسی علاقے میں تجھے مہینہ بھر سے ڈھونڈ رہا ہوں۔“
”میں بھی مہینے میں صرف ایک بار ہی اس طرف آتا ہوں۔“ ندیم نے بتایا۔
”وہ کیوں؟“
”مہینے بھر کا سودا لینے۔“ ندیم نے کہا۔ ”اس کے بعد پورے مہینے ادھر آنے کی ضرورت نہیں ہوتی۔“
”کمال ہے۔ بڑی لگی بندھی زندگی گزار رہا ہے۔“ محبوب نے کہا۔ ”تیرا انکل کرتا کیا ہے؟“
”کچھ بھی نہیں۔ کسی زمانے میں انہوں نے محنت کی تھی۔ پیسے جمع کئے تھے اور اب فرصت کی زندگی گزار رہے ہیں۔“
”مزے ہیں بھائی، مزے ہیں ایک ہمیں دیکھو خوار ہوتے پھر رہے ہیں۔ ویسے یار! تمہارے انکل کا گھر تو بہت شاندار ہوگا۔“
”ایسا ویسا۔ میرا خیال ہے کہ پورے ملک میں اس سے خوبصورت مکان اور کوئی نہیں ہوگا۔ وہ جنت ہے جنت۔“
”یار بتاﺅ تو سہی، تمہاری وہ جنت ہے کہاں؟“
”یہ نہیں بتا سکتا۔ یہ میری مجبوری ہے۔“
”کمال کے آدمی ہو یار۔ گھر کا پتا بتانے سے انکار کر رہے ہو۔ خیر چھوڑو۔ مجھے تمہارے گھر سے کیا لینا دینا۔“
ندیم نے محبوب کو اس دن پانچ سو دیئے تھے۔ پانچ سو لے کر محبوب بہت خوش دکھائی دے رہا تھا۔
اس شام ندیم سودا سلف خرید کر بہت جلدی واپس آگیا تھا۔
دوسری صبح وہ معمول کے مطابق چشمے سے پانی بھرنے کاٹج سے نکلا تھا کہ اچانک ایک درخت کے پیچھےسے دو آدمی نکل کر اس کے سامنے آ گئے۔
ان میں سے ایک تو وہی محبوب تھا اور اس کے ساتھ کوئی اور بھی تھا۔ جس کے چہرے ہی سے خباثت برس رہی تھی۔ ندیم ان دونوں کو دیکھ کر حیران اور خوفزدہ رہ گیا۔
”تم! تم یہاں کیسے آگئے؟“ اس نے پریشان ہو کر پوچھا۔
”پیارے! تم تو اپنے گھر کا پتا بتا نہیں رہے تھے۔ اس لئے میں تمہارا پیچھا کیا تھا۔“ محبوب نے بتایا۔
”تم میرا پیچھا کرتے ہوئے یہاں تک آئے ہو!“
”ہاں! یار یہ جگہ تو واقعی جنت ہے۔ تم ٹھیک ہی کہتے تھے کہ تم جنت میں رہتے ہو۔“
”وہ تو سب ٹھیک ہے لیکن تمہیں یہاں نہیں آنا چاہئے تھا۔“ ندیم نے کہا۔ ”تم لوگ چلے جاﺅ یہاں سے۔“
”کیسے بات کر رہے ہو۔“ محبوب کے ساتھ آنے والا بول پڑا۔ ”یہ جگہ تمہارے انکل کی تو نہیں ہے نا۔ ہمیں یہاں رہنے سے کون روک سکتا ہے؟“
”نہیں تم یہاں نہیں رہو گے۔“ ندیم نے لہجہ سخت کر لیا۔ ”تم دونوں جاﺅ یہاں سے۔ ابھی اسی وقت چلے جاﺅ۔“
”سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔“ محبوب نے کہا۔ ”بے وقوف آدمی یہ تو دیکھ، یہاں پیسے کمانے کے کتنے گولڈن چانسز ہیں۔“ اس نے پرندوں کی طرف اشارہ کیا۔ ”یہ ہرنوں کو دیکھ رہے ہو نا۔ یہ کہاں ملیں گے جانتے ہو مارکیٹ میں ان کی کتنی قیمت ہے۔ پچاس ہزار ساٹھ ہزار۔“
”نہیں، تم ان کو ہاتھ بھی نہیں لگا سکتے۔“
”محبوب تیرا دوست تو پھیلنے لگا ہے۔“ محبوب کے دوست نے محبوب سے کہا۔ ”شاید پاگل ہو گیا ہے، اسے اندازہ ہی نیں کہ یہ کیسے خزانے پر بیٹھا ہوا ہے۔“
ندیم کے لئے یہ سب ناقابل برداشت ہوتا جا رہا تھا۔ اس نے ایک بار پھر ان دونوں کو سمجھانے کی کوشش کی۔ لیکن وہ دونوں اپنی بات پر بضد رہے تھے۔
آخری حربے کے طور پر ندیم نے غصے میں آکر محبوب کے چہرے پر ایک زور دار گھونسا رسید کر دیا تھا۔ گھونسا کھا کر محبوب چکراتا ہوا ایک طرف جاگرا۔
حالانکہ وہ عمر میں ندیم سے بڑا تھا لیکن ندیم کی پرورش یہاں کے صحت مند ماحول میں ہوئی تھی۔ اس لئے اس میں اتنی طاقت تھی کہ اس نے ایک گھونسے میں محبوب کو نیم بے ہوش کر دیا تھا۔
اور اس کے بعد جو کچھ ہوا۔ ندیم نے اس کے بارے میں کبھی سوچا بھی نہیں ہوگا۔ ندیم کے ساتھ آنے والے نے اپنی جیب سے ایک ٹی ٹی نکال لی تھی۔ اس نے ایک لمحہ انتظار کئے بغیر ندیم پر گولی چلادی۔
اس وادی میں پہلی دفعہ گولی کی آواز گونجی تھی۔
پرسکون پرندے گھبرا کر اڑ گئے۔ کلیلیں کرتے ہوئے ہرنوں نے خطرہ محسوس کر کے دوڑ لگا دی۔ گولی کی یہ بھیانک آواز اکبر خان نے بھی سنی تھی۔
”یاخدا رحم کرنا۔“ اس نے اپنا ہاتھ سینے پر رکھ لیا۔
وہ کسی طرح اپنے بستر سے اٹھ کر کاٹج سے باہر آگیا۔
چشمے کی طرف سے آواز آئی تھی۔ وہ خود کو گھسیٹتا ہوا چشمے کی طرف چل پڑا اور سامنے ندیم کی لاش پڑی ہوئی تھی۔
اکبر خان کے دل پر ایک زور دار گھونسا لگا۔ اس نے ندیم کی طرف بڑھنے کی کوشش کی لیکن خود دل تھام کر گر پڑا۔
گولی کی آواز سفر کرتی ہوئی پہاڑیوں کے دوسری طرف چلی گئی تھی۔ جہاں کچھ شکاریوں نے پڑاؤ کر رکھا تھا۔ وہ شکار کی تلاش میں اس علاقے میں آئے تھے۔ لیکن انہیں کچھ نہیں مل رہا تھا۔
گولی کی وہ آواز انہیں کھینچتی ہوئی اس جنت کی طرف لے گئی۔
یہ چھ شکایروں کا ایک گروہ تھا۔ انہوں نے وہاں اتنے ہرن دیکھے کہ ان کی آنکھیں چمک اٹھیں۔ وہ وادی گولیوں کی ہیبت ناک آوازوں سے گونجنے لگی۔
محبوب اور اس کے ساتھیوں کے لئے یہ سب ناقابل برداشت تھا۔ وہ تو اس جنت کو اپنے لئے مخصوص کرنا چاہتے تھے۔ انہوں نے ان شکاریوں پر حملہ کر دیا۔
شکایروں کا صرف ایک ساتھی مرا تھا جبکہ شکاریوں نے ان دونوں کو مار دیا تھا۔
اس کے بعد وہاں کچھ لوگ اور آئے۔ انہوں نے ان شکاریوں کو مار دیا۔ اور یہ سلسلہ چلتا رہا۔ چلتا رہا اور اب اتنے برسوں کے بعد وہ جنت جہنم بن چکا ہے۔
آئے دن لوگ مرتے رہتے ہیں۔ بات گولیوں سے کہیں آگے جا چکی ہے۔ محبوب اور اس کے ساتھی نے جس کام کی ابتدا کی تھی۔ دوسروں نے اسے انتہا تک پہنچا دیا تھا۔
اب اگر آج کوئی اکبر خان کسی ندیم کو لے کر ایسی کسی جنت کی تلاش کرنا چاہے تو شاید وہ اسے وہ جنت کہیں نہیں ملے گی اور جب چلتے چلتے وہ بچہ کھلونوں کی کسی دکان کے سامنے سے گزرتے ہوئے پستول دیکھ کر اسے لینے کی ضد کرے گا تو اکبر خان اسے منع کرے گا۔ ”نہیں بیٹے! اس قسم کے کھلونوں سے نہیں کھیلتے۔ کیونکہ اس قسم کے کھلونے نوجوان نسل کو مجرم بنا رہے ہیں اور زمین سے جنت غائب ہوتی جا رہی ہے۔“
….٭….

بارے KAHAANY.COM

Check Also

” جب رونگٹے کھڑے ہو گئے "

شیرازی ہاﺅس کا یہ وسیع و عریض ڈرائینگ روم اور گھر کے مکینوں کا رہن …

122 comments

  1. Nice post. I used to be checking constantly this blog and I’m inspired! Extremely useful info specifically the last section 🙂 I take care of such information a lot. I was seeking this particular information for a long time. Thanks and best of luck.

  2. Hay. The manager caught the boy red-handed when he was stealing cigarettes.

  3. Suit yourself. I’m all in, I’d better go to bed now.

  4. Sympathizing. First things first: how much money do we have to pay right away?

  5. I’m not that much of a online reader to be honest but your
    sites really nice, keep it up! I’ll go ahead and bookmark
    your site to come back later on. Many thanks

  6. I do not even know how I ended up here, but I thought this post was great.

    I don’t know who you are but certainly you’re going to a famous blogger
    if you aren’t already 😉 Cheers!

  7. Excellent beat ! I would like to apprentice while you amend your web site, how could i subscribe for a blog website?
    The account aided me a acceptable deal. I had been tiny bit acquainted of this your broadcast offered
    bright clear concept

  8. I think the admin of this site is in fact working hard in favor
    of his site, since here every stuff is quality based material.

  9. Truly when someone doesn’t understand after that its
    up to other visitors that they will help, so here it happens.

  10. Thanks for sharing your thoughts on csgo skins for cash instantly.
    Regards

  11. These are genuinely wonderful ideas in about blogging.
    You have touched some nice factors here. Any way keep up wrinting.

  12. It’s really a nice and helpful piece of info.
    I am happy that you simply shared this helpful info
    with us. Please stay us informed like this. Thanks for sharing.

  13. Howdy fantastic website! Does running a blog
    similar to this require a large amount of work? I have absolutely no knowledge of coding
    but I had been hoping to start my own blog in the near future.
    Anyways, should you have any recommendations or tips for new blog owners
    please share. I know this is off topic nevertheless I simply wanted to ask.

    Thanks a lot!

  14. Hi there! I realize this is somewhat off-topic however I needed to ask.
    Does managing a well-established website like yours require a
    lot of work? I am completely new to operating a blog however I
    do write in my diary daily. I’d like to start a blog so I can easily share my experience and views online.

    Please let me know if you have any kind of ideas or tips for brand new
    aspiring bloggers. Appreciate it!

  15. I love your blog.. very nice colors & theme. Did you design this website yourself or did you
    hire someone to do it for you? Plz respond as I’m looking to design my own blog and
    would like to know where u got this from. many thanks

  16. you’re in point of fact a good webmaster.

    The site loading velocity is incredible. It
    sort of feels that you’re doing any unique trick.
    Furthermore, The contents are masterwork. you’ve done a magnificent process in this subject!

  17. What’s up Dear, are you truly visiting this web site on a regular basis, if so then you will absolutely take good knowledge.

  18. Great post. I was checking constantly this blog and I’m impressed!
    Very helpful information particularly the closing section :
    ) I maintain such info much. I used to be looking
    for this certain info for a long time. Thanks and good luck.

  19. Hi there everyone, it’s my first go to see at this site, and
    paragraph is truly fruitful in support of me, keep up posting these
    articles or reviews.

  20. Hi, after reading this amazing paragraph i am as well delighted to share my know-how here with friends.

  21. Thank you for the good writeup. It actually was
    a enjoyment account it. Glance advanced to more delivered agreeable from you!
    By the way, how could we keep up a correspondence?

  22. I have read so many articles or reviews regarding
    the blogger lovers but this piece of writing is in fact a pleasant post, keep it up.

  23. It’s actually a cool and helpful piece of info. I’m happy that you shared this helpful information with us.
    Please stay us up to date like this. Thanks for sharing.

  24. Definitely imagine that which you said. Your favorite justification appeared to be on the web the easiest factor to
    take into account of. I say to you, I certainly get annoyed even as people think about worries that they plainly do not
    recognize about. You managed to hit the nail upon the highest
    and defined out the entire thing without having side effect ,
    people could take a signal. Will likely be back to get more.
    Thank you

  25. Every weekend i used to pay a quick visit this web site, for the
    reason that i want enjoyment, for the reason that this this website
    conations truly good funny material too.

  26. What’s Going down i’m new to this, I stumbled upon this I have found It absolutely useful and it has helped me out
    loads. I hope to contribute & assist different users like its helped me.
    Good job.

  27. Hi I am so thrilled I found your webpage, I really found you by
    error, while I was browsing on Bing for something else, Regardless I am here now and would just like
    to say cheers for a fantastic post and a all round entertaining blog (I
    also love the theme/design), I don’t have time to read through it all at the minute but
    I have saved it and also added in your RSS feeds, so when I have time
    I will be back to read more, Please do keep up the superb job.

  28. This post is priceless. When can I find out more?

  29. Hiya! Quick question that’s entirely off topic. Do you know how to make your site mobile friendly?
    My weblog looks weird when browsing from my
    iphone 4. I’m trying to find a theme or plugin that might be able to correct this issue.
    If you have any suggestions, please share. Cheers!

  30. Thanks for ones marvelous posting! I quite enjoyed reading it,
    you could be a great author.I will be sure to bookmark your blog and definitely will come back
    in the foreseeable future. I want to encourage yourself to continue your great job, have a nice morning!

  31. Hello, I log on to your blog like every week. Your story-telling style is awesome,
    keep up the good work!

  32. Heya superb website! Does running a blog such as this
    require a large amount of work? I’ve no understanding of coding however
    I had been hoping to start my own blog soon. Anyhow, should you have any recommendations or techniques for new blog owners please share.
    I understand this is off topic however I simply had to ask.
    Appreciate it!

  33. Right here is the right web site for anybody who hopes to find out about this topic.
    You understand a whole lot its almost tough to argue with you (not that I personally will need to…HaHa).
    You certainly put a brand new spin on a subject that has been written about for many years.
    Excellent stuff, just excellent!

  34. Hi! I’ve been following your blog for a while now and
    finally got the bravery to go ahead and give you a shout
    out from Houston Texas! Just wanted to
    tell you keep up the excellent work!

  35. Hello I am so happy I found your blog page, I really found you by error, while I was researching on Askjeeve for something else,
    Nonetheless I am here now and would just like to say many thanks for a marvelous post and a all round exciting blog
    (I also love the theme/design), I don’t have time to browse it all at the minute but I
    have bookmarked it and also added your RSS feeds, so when I have time I will be back
    to read a great deal more, Please do keep up the superb work.

  36. I was wondering if you ever thought of changing the page layout
    of your website? Its very well written; I love what youve got to say.
    But maybe you could a little more in the way of content
    so people could connect with it better. Youve got an awful lot of text for only having one
    or 2 images. Maybe you could space it out better?

  37. I tried to keep a straight face, but failed. http://www.ctsspb.ru/1/page257.html?news_id=231
    It’s terrible!

    Not enough said, but. He is glad to know you are fine.

  38. I have to say I am quite obsessed with making lists. Lists help me stay organized sooo much! And having a calendar I can write on also helps out. Great tips! Especially for bloggers. http://suenosenazucar.com/index.php/forum/donec-eu-elit/159936
    That does it!

    Not enough said, but. The letters are on the desk.

  39. Excellent web site. Lots of helpful info here. I’m sending it
    to a few buddies ans also sharing in delicious. And of course, thanks to your effort!

  40. Hello, its good piece of writing about media print, we all be aware of media is a enormous source of data.

  41. WOW just what I was searching for. Came here by
    searching for mink eyelash extensions cruelty

  42. Hi my family member! I wish to say that this post is awesome, great written and include
    approximately all important infos. I’d like
    to peer more posts like this .

  43. Now I am going away to do my breakfast, afterward having my breakfast coming again to read further news.

  44. Yesterday, while I was at work, my sister stole my iPad and tested to see if
    it can survive a thirty foot drop, just so she can be a youtube sensation. My iPad is
    now destroyed and she has 83 views. I know this is completely off topic but I had to share
    it with someone!

  45. I love it when folks get together and share views. Great website, stick with it!

  46. Fantastic beat ! I would like to apprentice while you amend your web site, how could i subscribe for a blog
    website? The account helped me a acceptable
    deal. I had been tiny bit acquainted of this your broadcast provided bright clear concept

  47. I’ve read some good stuff here. Certainly price bookmarking
    for revisiting. I surprise how much effort you put to create one of
    these great informative site.

  48. Woah! I’m really loving the template/theme of this site.
    It’s simple, yet effective. A lot of times it’s very hard to get
    that "perfect balance” between usability and visual
    appeal. I must say that you’ve done a very good job with this.
    Additionally, the blog loads super fast for me on Internet explorer.
    Superb Blog!

  49. Hi there everyone, it’s my first pay a quick visit at this website, and paragraph is genuinely
    fruitful in favor of me, keep up posting these
    types of posts.

  50. Your mode of describing the whole thing in this paragraph is really pleasant, all
    be capable of easily be aware of it, Thanks a lot.

  51. Ahaa, its good discussion regarding this paragraph here at this web site,
    I have read all that, so at this time me also commenting here.

  52. This piece of writing gives clear idea for the
    new visitors of blogging, that actually how to do blogging and site-building.

  53. Heya terrific website! Does running a blog similar to this take a large amount of work?
    I have absolutely no expertise in programming however I was hoping to start my own blog in the
    near future. Anyways, should you have any ideas or techniques for new blog owners please share.
    I know this is off topic but I just had to ask. Many thanks!

  54. Greate article. Keep writing such kind of information on your blog.

    Im really impressed by your blog.
    Hey there, You’ve done an incredible job.
    I will certainly digg it and in my view suggest to my friends.
    I’m confident they’ll be benefited from this web site.

  55. I enjoy what you guys are up too. This sort of clever work and
    reporting! Keep up the very good works guys I’ve included you guys to my own blogroll.

  56. Hi there just wanted to give you a quick heads up. The words in your post seem to be running off the screen in Internet explorer.
    I’m not sure if this is a format issue or something to do with internet browser compatibility but I figured I’d post to let you know.
    The layout look great though! Hope you get the problem resolved soon. Thanks

  57. Excellent post. I was checking constantly this blog and I am
    impressed! Extremely helpful info specifically the last part 🙂 I care for such info a lot.
    I was looking for this particular info for a very long time.

    Thank you and good luck.

  58. Hurrah, that’s what I was searching for, what a data! present here at this
    web site, thanks admin of this web page.

  59. Saved as a favorite, I love your web site!

  60. Does your blog have a contact page? I’m having trouble locating it but, I’d like to send you an email.
    I’ve got some ideas for your blog you might be interested in hearing.
    Either way, great blog and I look forward to seeing it improve over time.

  61. Thank you for another great post. Where else could anybody get that type of info in such an ideal way of writing? I’ve a presentation next week, and I am on the look for such info.

  62. Why visitors still use to read news papers when in this technological globe all is presented on web?

  63. Hey there! I’m at work surfinbg around your blog from my new
    iphone! Just wanted to say I love reading your blog and look
    forward to all your posts! Carry onn the fantastic work!

  64. Wow, amazing blog structure! How lengthy have you been blogging for?

    you make blogging look easy. The entire look of your web
    site is wonderful, as neatly as the content material!

  65. Usually I don’t read article on blogs, but I wish to
    say that this write-up very pressured me to try and do so!

    Your writing taste has been surprised me. Thank you, quite great post.

  66. Wow that was unusual. I just wrote an extremely long comment but after I clicked submit
    my comment didn’t show up. Grrrr… well I’m not writing all that over again. Regardless,
    just wanted to say excellent blog!

  67. You ought to be a part of a contest for one of the most useful websites
    on the net. I am going to highly recommend this web
    site!

  68. Thank you for every other informative web site. The place else may I am getting that
    type of info written in such an ideal approach?
    I have a mission that I am simply now running on, and
    I have been on the glance out for such information.

  69. I am actually happy to glance at this webpage posts which consists of plenty of
    helpful information, thanks for providing these data.

  70. Wonderful website. A lot of helpful info here. I am sending it to a few friends ans additionally sharing in delicious.
    And naturally, thanks to your effort!

  71. I have read so many articles or reviews concerning the blogger lovers however this piece of writing is really
    a good paragraph, keep it up.

  72. Hmm is anyone else having problems with the images on this blog loading?
    I’m trying to find out if its a problem on my end or if it’s the blog.
    Any suggestions would be greatly appreciated.

  73. I think this is among the most vital info for me.
    And i am glad reading your article. But wanna remark on some general things, The site style is perfect,
    the articles is really great : D. Good job, cheers

  74. Pretty section of content. I just stumbled
    upon your weblog and in accession capital to assert that I get in fact
    enjoyed account your blog posts. Any way I will be subscribing to your augment
    and even I achievement you access consistently rapidly.

  75. Admiring the time and effort you put into your website and detailed information you
    present. It’s great to come across a blog every once in a
    while that isn’t the same outdated rehashed material. Excellent read!

    I’ve saved your site and I’m adding your RSS feeds to my Google
    account.

  76. Greetings from Idaho! I’m bored to tears at work so I decided to
    browse your website on my iphone during lunch break. I really like the info you
    provide here and can’t wait to take a look when I get home.
    I’m amazed at how quick your blog loaded on my mobile
    .. I’m not even using WIFI, just 3G .. Anyhow, good site!

  77. Hey would you mind sharing which blog platform you’re using?
    I’m planning to start my own blog soon but I’m having a tough time deciding between BlogEngine/Wordpress/B2evolution and
    Drupal. The reason I ask is because your design seems different
    then most blogs and I’m looking for something unique.
    P.S My apologies for being off-topic but I had to ask!

  78. I couldn’t resist commenting. Exceptionally well written!

  79. Why viewers still make use of to read news papers when in this technological globe everything is accessible on web?

  80. I constantly emailed this weblog post page to all my friends, as if like to read
    it then my friends will too.

  81. If you wish for to grow your experience only keep visiting this web site and be updated with the most recent information posted here.

  82. I was suggested this web site by way of my cousin. I’m not
    sure whether or not this post is written by him as no
    one else understand such detailed approximately my problem.
    You’re wonderful! Thank you!

  83. Wow, wonderful blog layout! How long have you been blogging for?
    you make blogging look easy. The overall look of your
    web site is great, as well as the content!

  84. Great post! i like hermosa marketing hermosa marketing and hermosa marketing.

  85. I’m amazed, I must say. Seldom do I encounter a blog that’s equally
    educative and entertaining, and let me tell you, you’ve hit the nail on the
    head. The problem is something too few folks are speaking intelligently
    about. I am very happy I came across this during my search for something relating to this.

  86. Thanks for writing this. hermosa beach and redondo marketing. see the benifits of a specialized online advertising plus online marketing plus re-targeting advertising.

  87. Great read. Delivering highly structured product real estate agent.

  88. were you aware there is a google adwords marketing hermosa beach company working with customers, building google adwords advertising? I enjoyed reading this. i am huge fan of jesse grillo jesse grillo and jesse grillo.

  89. Nice read. learning to pilot a plane baton twirling and ice skating.

  90. Great post! i am huge fan of pole dancing playing musical instruments and playing team sports.

  91. Major thanks for the blog. Cool.

  92. "Thanks-a-mundo for the article post.Really looking forward to read more. Really Cool.”

  93. "Hi there, You’ve done an incredible job. I will definitely digg it and personally recommend to my friends. I’m sure they’ll be benefited from this web site.”

  94. "Thanks for the posting. My partner and i have continually noticed that almost all people are eager to lose weight as they wish to appear slim along with attractive. On the other hand, they do not often realize that there are other benefits so that you can losing weight also. Doctors insist that obese people are afflicted with a variety of disorders that can be directly attributed to the excess weight. The good thing is that people who definitely are overweight and also suffering from a variety of diseases can reduce the severity of their particular illnesses by means of losing weight. It’s possible to see a gradual but noticeable improvement with health whenever even a slight amount of losing weight is reached.”

  95. "Fantastic article.Thanks Again.”

  96. I simply must tell you that your articles are really great. I enjoy the info you provide here and can not wait to take a look when I get home. It is really a shock you do not have a larger following.

  97. I will bookmark this. If you can, shoot me an email and we will discuss because I have an idea you will love.

  98. I think the admin of this web page is really working hard in support of his web site, since here every material is quality based information. You have a great sense of humor. Thumbs up! No complaints on this end, simply a amazing piece.

  99. I simply have to tell you that your articles are really great. This page was already loaded when I turned on my computer. I enjoyed reading what you had to say. That cleared it up for me.

  100. I am impressed, I need to say. If your articles are always this helpful, I will be back. You are more fun than bubble wrap. good work, keep it up. Your writing style reminds me of my bestie.

  101. You are absolutly a professional. You have a good head on your shoulders.

  102. I really love your writing style. Keep it up! You could survive a Zombie apocalypse.

  103. I love your blog.. very nice colors & theme. Did you design this website yourself or did you
    hire someone to do it for you? Plz respond as I’m looking to construct my own blog and
    would like to know where u got this from. kudos

  104. Wow, awesome blog layout! How long have you been blogging for?
    you made blogging look easy. The overall look of your site is great, let alone the content!

  105. This might be a weird thing to to say but, I like your articles. Such a deep answer! I bet you make babies smile.

  106. Incredible points. Outstanding arguments.

    Keep up the good spirit.

  107. Top Google Plus pros would really like your posts. I have been looking everywhere for this! Thanks for sharing your info.

  108. This page was running when I turned on my phone. You really sparked my interest.

  109. Babies and small animals probably love you. I have added your write up to my LinkedIn bookmarks Thx again. That is a smart way of thinking about it. I simply must tell you that I really love your posts article.

  110. I recently came across your site and have been scaning along. I thought I could leave my first comment. I don’t know what to say except that I have enjoyed scaning what you all have to say…

  111. I wanted to draft you a tiny note to help thank you as before for those beautiful tactics you’ve discussed on this website. It has been quite seriously generous with you in giving unhampered precisely what a few individuals could have offered for sale as an ebook to help with making some money for themselves, even more so given that you might well have tried it in case you decided. The tricks additionally served to provide a great way to recognize that most people have a similar zeal similar to my own to figure out more on the subject of this problem. Certainly there are a lot more enjoyable sessions ahead for those who take a look at your site.

  112. Hey, thanks for the article. Great.

  113. It is appropriate time to make some plans for the long run and it is time to be happy. I have read this submit and if I may just I want to counsel you some interesting things or suggestions. Maybe you could write next articles regarding this article. I want to read more things approximately it!

  114. Thanks for every other fantastic post. Where else may just anyone get that type of info in such a perfect approach of writing? I have a presentation subsequent week, and I’m at the look for such info.

  115. Great site. Lots of helpful information here. I’m sending it to some friends ans additionally sharing in delicious. And certainly, thank you to your sweat!

  116. Hello there, I discovered your blog via Google at the same time as searching for a comparable topic, your website got here up, it appears great. I have added to favourites|added to bookmarks.

  117. Fantastic article post.Really thank you! Really Great.

  118. My brother suggested I would possibly like this web site. He was once entirely right. This submit truly made my day. You can not consider just how much time I had spent for this info! Thanks!

  119. I used to be suggested this web site by my cousin. I am now not positive whether this submit is written via him as nobody else recognise such special approximately my trouble. You’re amazing! Thanks!

  120. Wow, great post. Want more.

  121. progressive web apps google io

  122. I really enjoy the blog post.Thanks Again.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Translate »
error: Content is protected !!